پنجگورنے پی پی ایل بلوچستان کپ 2017 جیت لیا

کوئٹہ ،2اپریل 2017 : ملک کی حالیہ تاریخ میں کسی بھی ادارے کے تعاون سے منعقد ہونے والا سب سے بڑا فٹبال ٹورنامنٹ پاکستان پیٹرولئیم لمیٹڈ (پی پی ایل) بلوچستان فٹبال کپ2017کا فائنل 2 اپریل کوایوب اسٹیڈیم ، کوئٹہ میں پنجگور اور چمن کے مابین کھیلا گیا ۔پنجگور کی ٹیم نے ٹرافی جیت لی۔قبل ازیں،31 مارچ کو کھیلے گئے سیمی فائنل میچز میں چمن کا مقابلہ کوئٹہ سٹی اور پنجگور کا مقابلہ ڈی ایف اے کوئٹہ سے ہواتھا۔

مہمانِ خصوصی، وزیرِ مملکت برائے پیٹرولئیم و قدرتی وسائل جام کمال خان، صوبائی وزیر داخلہ و قبائلی امور میر سرفراز بگٹی، پی پی ایل کے ا یم ڈی و سی ای او سید وامق بخاری اور پی پی ایل بلوچستان فٹبال کپ 2017 کی انتظامی کمیٹی کے چیئرمین سردار نوید حیدر خان کے ساتھ ساتھ دیگر عہدےداران اور علاقائی عمائدین، ٹورنامنٹ کے سفیروں اور میڈیا سے تعلق رکھنے والے افراد بھی تقریب میں موجود تھے۔

تماشائیوں سے خطاب کرتے ہوئے وامق بخاری نے جیتنے اور رنر۔اپ رہنے والی ٹیموں کو ان کی بہترین کارکردگی پر مبارکباد پیش کی۔انہوں نے پورے ٹورنامنٹ کے دوران مقامی آبادی کے تعاون کو سراہتے ہوئے کہا کہ" ٹورنامنٹ کی کامیابی کا اندازہ اُن اضلاع کی مقامی آبادی کی جانب سے مقابلوں میں خوش دلی کے اظہار سے ہوتا ہے، جن اضلاع میں یہ میچز کھیلے گئے۔ سب سے بڑے اسپانسرڈ فٹبال ٹورنامنٹ نے مقامی سطح پر موجود نوجوان ٹیلنٹ کو اُن کے پسندیدہ کھیل میں صلاحیتوں کے جوہر دکھانے اور اسے پروان چڑھانے کا موقع فراہم کرکے بلوچستان کے بارے میں تصور کو بہتر بنایا ہے۔

وامق بخاری نے صوبائی حکومت، پاکستان فٹبال فیڈریشن، بلوچستان فٹبال ایسوسی ایشن اور ٹورنامنٹ کے سفیروںو دیگر شراکت داروں کے تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

وزیر ِ مملکت جام کمال خان نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے بلوچستان میں اتنا بڑا ٹورنامنٹ منعقد کرنے پر پی پی ایل کی کاوشوںکو سراہا۔انہوں نے صوبے میں امن و خوشحالی کے فروغ کے سلسلے میں مقامی نوجوانوں کی صلاحیتوںکواستعمال کرنے کے لئے پی پی ایل سے اس ٹورنامنٹ کو ہر سال باقائدگی سے منعقد کرا نے کو کہا۔انہوں نے بلوچستان میں کاروباری سماجی بھلائی پروگرام کے تحت مقامی افراد کا معیار ِ زندگی بلند کرنے کے پی پی ایل کے عہد کا واضح تزکرہ کیا۔

بعد ازاں، مہمانِ خصوصی اور وامق بخاری نے دیگر اہم شخصیات کے ساتھ جیتنے اور رنر۔اپ رہنے والی ٹیموں کے ساتھ ساتھ نمایاں کھلاڑیوںمیں انعامات تقسیم کئے۔

ٹورنامنٹ کا انعقاد10 مارچ سے2 اپریل تک ہوا جس میں صوبے کے6 ڈویژنز کوئٹہ، قلات، مکران، سبی، ژوب اورنصیرآباد سے 37 ٹیموں نے 74 میچ کھیلے۔ڈویژنز کی سطح پر کوالیفائنگ راؤنڈ10 سے 18 مارچ کے درمیان کھیلے گئے جن میں 10 ٹیموں نوشکی ، کوئٹہ سٹی، لورالائی، شیرانی، تربت، پنجگور، خاران، لسبیلہ، سبی اورجعفرآباد نے 2016 کے ٹورنامنٹ کی فاتح اور رنر۔اپ کوئٹہ اور چمن کے ساتھ فائنل راؤنڈ کے لئے کوالیفائی کر لیا۔21 مارچ سے فائنل راؤنڈ میں 12ٹیمیں مد مقابل آئیں جن میں سے 8 ٹیموں کوئٹہ سٹی ، لسبیلہ، پنجگور، تربت ، چمن، نوشکی، ڈی ایف اے کوئٹہ اور خاران نے 28 اور 29 مارچ کو کھیلے گئے کوارٹر فائنل میں جگہ بنائی ۔

پی پی ایل نے ضلعی سطح پر اور فائنل راؤنڈ میں حصہ لینے والی ٹیموں کو پر کشش مراعات فراہم کی ہیں۔ ساتھ ہی دیگر اخراجات کے علاوہ کمپنی کی جانب سے کھلاڑیوں کو اسپورٹس کٹ بھی فراہم کی گئی تاکہ تمام علاقوں سے کھلاڑیوں کی زیادہ سے زیادہ شرکت کو ممکن بنایا جاسکے۔ کمپنی نے ان فٹبال گراؤنڈز ،جہاں یہ میچ کھےلے گئے ہیں، کی بحالی کے لئے بھی اخراجات کئے ہیں۔